نورِ ایماں کی حدت سے ، شمعِ محبت جلا کر تو دیکھو

ریاض احمد ملک دوالمیال ضلع چکوال

نمازوں  میں  لطف  دعاؤں  کا  اٹھا  کر  تودیکھو

ابتلاؤں  میں  سر سجدوں  میں  جھکا  کر  تو  دیکھو

کشتیئِ دل آزمائیشوں کے چنگل سے نکل جا ئے گی

دلوں  میں  خدا  پر  کامل  یقیں  بسا  کر  تو دیکھو

ممتا  کی  دعائیں  نارِ  ظلم  کو  کر دیں گی  ٹھنڈا

دامن  پہ  ممتا  کے  آنسوں  کو  گرا کر  تو دیکھو

ناؤ  خود  ہی  بھنور  سے  باہر  نکل   جائے  گی

بحر ِ  محمد ِ  مصطفیٰؐ  میں  غوطہ  لگا  کر   تو   دیکھو

خود بخود درِ خیبر کھل جائے گا اللہ کے کرم سے

دلوں میں حبِ علی اور جرأت ِ شبیر بسا کر تو دیکھو

یقینِ کامل ہو تو خدا بھر دیتا ہے رہائی کی گدا سے

درِ مولا پہ خالی کشکول اپنا  بڑھا کر تو دیکھو

طوفانوں کے  رخ  پل  میں  بدل  جائیں  گے

اپنے آقا کی دعاؤں کو کبھی بلا کر تو دیکھو

بجلیوں کی کڑک تمہاری حفاظت پہ لگ جائے گی

پڑھتے درود و سلام آشیانے اپنے بنا کر تو دیکھو

خزاؤں کے  شب خون  سے مت گھبرا،بلبلِ بے نوا

فضائیں  بہاروں کی فضلِ مولا سے  بلا کر تو دیکھو

انہیں  مردہ  شاخوں  سے رمق زندگی کی  پھوٹے گی

مسیحِ محمدی ؐ کی دعاؤں کے اثر آزما کر تو دیکھو

ریاض  ؔاس  کا  نور  روشن کر دے گا سارے  سماں کو

نورِ ایماں کی حدت سے شمعِ محبت  جلا کر تو دیکھو

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *