جرمنی میں نسل پرست انتہا پسندوں کے مسلح ہونے کا انکشاف

یورپ سے FEBRUARY 06, 2021 برلن ( نیوز ڈیسک) جرمن خفیہ ایجنسی نے کہا ہے کہ ملک میں دائیں بازو کے نسل پرست انتہا پسندوں کے پاس بڑی تعداد میں اسلحہ موجود ہے۔ خبر رساں اداروں کے مطابق حکام کا کہنا ہے کہ انتہائی دائیں بازو کے 1203 افراد کے پاس اسلحہ ہے، جسے انہوں نے لائسنس لینے کے بعد خریدا۔ اس سلسلے میں وزارت داخلہ کی جانب سے جاری رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ 2019ء میں اسلحہ سے لیس انتہا پسندوں کی تعداد صرف 528 تھی۔  خفیہ ایجنسی بی ایف وی کے مطابق یہ تعداد بہت کم عرصے میں د گنا بڑھ چکی ہے۔ واضح رہے کہ جرمنی میں انتہا پسندوں سے متعلق یہ معلومات پارلیمان میں بائیں بازو کی اپوزیشن جماعت لیفٹ پارٹی کی خاتون رکن کے سوال کے جواب میں فراہم کی گئی ہیں، جن کے مطابق مسلح انتہا پسندوں میں شامل 17 افراد کو پہلے بھی فائرنگ کے مقدمات کا سامنا رہا ہے۔ وزارتِ داخلہ کے مطابق وفاقی پولیس نے فائرنگ کے ان واقعات کو فوجداری جرائم میں شامل نہیں کیا۔ دسمبر 2019ء میں پارلیمان میں اسلحہ پر بحث کے دوران لیفٹ پارٹی کے داخلی معاملات کی ماہر مارٹینا رینر نے واضح کیا تھا کہ 700 سے زائد نیو نازیوں کے پاس اسلحہ موجود ہے۔ ستمبر 2020ء میں جرمن خفیہ ادارے کی رپورٹ میں انکشاف ہوا کہ ملک میں تقریباً 13 ہزار دائیں بازو کے انتہا پسند موجود ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *