اللہ میرے بچوں کو کسی کافر ملک لیجائے

تحریر : عبدالکریم

اپنے بچوں کو ان درندوں سے بچانے کے لیے دعا کرو جدوجہد کرو کوشش کرو، پیسے خرچ کردو، مکان دوکان، کارخانے، بیوی کے زیور بیچ دو لیکن اپنے بچوں کو کسی کافر ملک میں بھیج دو، یہاں وہ کسی جگہ محفوظ نہیں ہیں، موٹر وے پر محفوظ نہیں ہیں، مسجد میں محفوظ نہیں ہیں، مدرسہ میں محفوظ نہیں ہیں اسکول میں محفوظ نہیں ہیں، یونیورسٹی و کالج میں محفوظ نہیں ہیں دارلعلوم میں محفوظ نہیں ہیں، عدالتوں میں محفوظ نہیں ہیں ایوانوں میں محفوظ نہیں ہیں۔ساہیوال میں بچوں کے سامنے والد، والدہ، بڑی بہن کو قتل کردیا گیا قاتل ریاست کی پناہ میں آگئے، رائو انوار نے سینکڑوں نوجوانوں کو گولیوں سے بھون دیا وہ آج بھی اپنے محل میں عیش کررہا ہے، مجید اچکزئی نے ہزاروں افراد کی موجودگی میں پولیس کانسٹیبل کو قتل کردیا ہر چیز کی ریکارڈنگ موجود ہے لیکن انصاف اندھا ہوتا اس لئے جج بھی اندھا ہوگیا اور قاتل اپنے ساتھ کالے کوٹ پہنے دلالوں کے ہمراہ فاتحانہ انداز میں کھڑا ہار پھول پہن رہا ہے، عوام کے نام پر غلام اس کے گرد جمع ہیں اور اس کے لئے نعرے لگا رہے ہیں۔یہ ظالم اس ملک کے حکمران ہیں جو ہر حکومت میں شامل ہوتے ہیں سارا نظام ان کے ہاتھوں یرغمال بنا ہوا ہے، آنکھوں والے اندھے، ذہنی طور پر نابالغ اپنے اپنے دیوتاؤں کی حمایت میں کھڑے ہوجاتے ہیں، آج وہ عورت لٹی ہے، کل کراچی میں بچی کو زیادتی کے بعد قتل کیا گیا تھا، پرسوں زینب کو نوچا گیا تھا، کہیں نواز گوندل کو شمالی علاقوں کی بغیر پیسوں کے سیر کرائی جاتی ہے، یہ پابندی لگائی جاتی ہے کہ سچ نہیں بولنا، ایک مکمل نااہل کو مہاتما بنا کر پیش کرنا ہے، اس ملک کی قسمت کا فیصلہ کرنے والوں نے اس کو تباہی کے گڑھے تک پہنچادیا ہے۔ لاہور کے سپریٹنڈنٹ پولیس عمر شیخ کا بیان دیکھیں یہ ہے ریاست کا Mindset یہ ہے ریاست کا مزاج، ریاست آپ کی فلاح کی ذمہ دار نہیں ہے وہ کہتی ہے کہ آپ باہر کیوں نکلے یہ عورت عزت لٹنے پر شور کررہی ہے کیوں کررہی ہے یہ فرانس نہیںہے یہ ہے جناب ہمارے حکمرانوں کا Mindset۔

میرے آقا و مولا صلی اللہ علیہ وسلم کی بعثت سے قبل کفار مکہ اپنی لڑکیوں کو زندہ دفن کر دیا کرتے تھے کیا ہم بھی ان درندوں سے بچانے کے لیے اپنی پھول جیسی بچیوں کو دفن کردیں لیکن ان جانوروں سے تو بچے بھی محفوظ نہیں ہیں کیا اب وہ دور آگیا ہے کہ لڑکے، لڑکیوں دونوں کو دفنادیا جائے، ان کو بھی زندگی سے محروم کردیا جائے تاکہ وہ ان درندوں سے محفوظ رہ سکیں۔

آئیے مل کر دعا کریں جدوجہد کریں کوشش کریں کہ ہمارے بچے کسی کافر ملک میں آباد ہوجائیں، کسی کافر ملک چلے جائیں تاکہ آن کی عزت، جان و مال آبرو محفوظ رہ سکے۔    ♣♣♣

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *