برطانیہ: 15 سالہ ’ریاضی دان‘سب سے کم عمر پی ایچ ڈی سکالر بننے کی راہ پر گامزن

شعبہ انٹرنیشنل بی بی سی اُردو

ساؤتھ کوئينز فيري سے تعلق رکھنے والے ايک 15 سالہ لڑکے کو برطانيہ کي سب سے معروف يونيورسٹي کي جانب سے ڈاکٹريٹ (پي ايچ ڈي) کي تعليم حاصل کرنے کي پيشکش کي گئي ہے۔

وانگ پوک لو، جنھيں پوک کے نام سے جانا جاتا ہے، في الحال ايک مقامي سکول ميں تعليم حاصل کر رہے ہيں۔

مگر سکول کي تعليم کے دوران ہي انھوں نے فارغ اوقات ميں سٹيٹسٹکس (اعدادوشمار) ميں ماسٹرز کر ليا ہے۔

آئندہ برس وہ برطانيہ کي ايڈنبرا يونيورسٹي ميں ڈاکٹريٹ کي تعليم حاصل کر رہے ہوں گے اور برطانيہ کے سب سے کم عمر پي ايچ ڈي سکالر بننے کي راہ پر گامزن بھي ہوں گے۔

في الوقت سب سے کم عمر ميں پي ايچ ڈي کرنے کا ريکارڈ 17 سالہ رتھ لارنس کے پاس ہے جنھوں نے سنہ 1989 ميں اکسفورڈ يونيورسٹي سے يہ ڈگري حاصل کي تھي۔

پوک کے ہائي سکول کي ہيڈ ٹيچر کا کہنا ہے کہ ان کا پورا سکول پوک کو حاصل ہونے والي کاميابيوں پر نازاں ہے۔

پوک نے بي بي سي کو بتايا کہ انھوں نے کنٹونيز کي شاعري 11 ماہ کي عمر سے ہي پڑھني شروع کر دي تھي۔

’يقين مانيے مجھے بالکل نہيں معلوم تھا کہ ميں کيا کر رہا تھا۔‘

تاہم جلد ہي انھوں نے رياضي کي بنيادي باتوں کو سمجھا، ضرب اور تقسيم کرنا سيکھا حالانکہ وہ تب چھوٹے سے بچے تھے۔

سنہ 2006 ميں وہ اپنے خاندان کے ہمراہ ہانگ گانگ سے سکاٹ لينڈ منتقل ہو گئے اور رياستي سرپرستي ميں چلنے والے تعليمي اداروں ميں تعليم حاصل کي مگر ان کي والدين نے گھر پر ہميشہ انھيں رياضي ميں دلچسپي لينے کي حوصلہ افزائي کي۔

نو سال کي عمر ميں پوک نے رياضي ميں سٹينڈرڈ گريڈ پاس کر ليا اور 10 سال کي عمر ميں ہائير سٹينڈرڈ۔ 13 سال کي عمر ميں انھوں نے اوپن يونيورسٹي سے رياضي ميں اونرز کي ڈگري حاصل کر لي تھي۔

گذشتہ ماہ شيفيلڈ يونيورسٹي سے سٹيٹسٹکسميں ماسٹر ڈگري حاصل کرنے کے بعد اب انھيں ايڈن برگ يونيورسٹي ميں عوامي صحت ميں ريسرچ کے مضمون ميں پي ايچ ڈي کي آفر کي گئي ہے۔

’ميں اب بھي يقين نہيں کرسکتا کہ مجھے اس پروگرام ميں قبول کر ليا گيا ہے کيونکہ مجھے لگتا ہے کہ دوسرے اميدوار زيادہ قابل ہوں گے۔‘

انھوں نے کہا کہ ’ميں يونيورسٹي ميں کُل وقتي طالبعلم کي حيثيت سے جانے کے ليے بےقرار ہوں۔‘

’يہ شايد تھوڑا عجيب ہو سکتا ہے ليکن ميں اپني عمر سے بڑے لوگوں ميں رہا ہوں۔ جُز وقتي کورسز کرنے کے دوران ڈسکشن فورمز پر ميرا سامنا بڑي عمر کے لوگوں سے ہوتا اور جب ميں امتحان دينے جاتا تو ميں ان سے بات چيت کرتا لہذا يہ ميرا معمول بننا شروع ہو گيا ہے۔‘

پوک، جو طب کي تعليم حاصل کرنے اور کارڈيالوجي يا نيورولوجي ميں ماہر ڈاکٹر بننے کے ليے بھي پراميد ہيں، کا کہنا ہے کہ تعليمي سلسلے ميں وہ اپنے مستقبل کے حوالے سے اب کافي ’پرسکون‘ ہيں۔

’ميرا نہيں خيال کہ في الوقت مجھے کسي بھي چيز کے ليے پريشان ہونے کي ضرورت ہے۔‘

’آہستہ آہستہ مگر ثابت قدمي سے‘

سکول ميں ان کے دوستوں نے بھي ان کي کاميابيوں کو سمجھنا شروع کر ديا ہے۔

انھوں نے بتايا کہ ’پہلے تو بہت حيران ہوتے تھے۔ ليکن وقت کے ساتھ ساتھ اب وہ اس پر بات بھي نہيں کرتے۔ اب يہ ايک عام سي بات ہے۔‘

’تعليمي سلسلے کے علاوہ باقي چيزوں ميں ان سے زيادہ مختلف نہيں ہوں۔‘

ويک اينڈز پر وہ رياضي پانچ سے چھ گھنٹے پڑھتے ہيں مگر اگر کسي کام کو مکمل کرنے کي ڈيڈ لائن جلد ہو تو وہ پورا دن بھي رياضي ہي پڑھتے رہتے ہيں۔

اس کے علاوہ فارغ وقت ميں وہ دوستوں کے ساتھ باہر جاتے ہيں، گيمز کھيلتے ہيں، موسيقي سنتے ہيں، شطرنج کھيلتے ہيں اور اس کرسمس پر گٹار خريدنے کے خواہش مند ہيں۔

’ہر کسي کي اپني کاميابياں ہوتي ہيں۔ ميرے خيال ميں انھيں اپني کاميابيوں پر خوش ہونا چاہيے اور اپني صلاحيتوں کو مزيد ترقي دينے کي کوشش کرتے رہنا چاہيے۔‘

پوک کا کہنا ہے کہ وہ اسي اصول پر آہستہ آہستہ مگر ثابت قدمي سے کاربند ہيں۔

’سکول ميں عام تجربہ‘

پوک کے سکول کے ہيڈ ٹيچر جان ووڈ کہتے ہيں کہ پوک کا تعليمي سفر ’قابل ذکر‘ ہے۔ جب انھوں نے سکول ميں پہلے سال ميں داخلہ ليا تو اس وقت بھي ان کے پاس رياضي کا وسيع تجربہ تھا۔

انھوں نے کہا کہ ’کافي حوالوں سے پوک ويسا ہي ہے جيسا ايک 15 سال کا لڑکا ہوتا ہے جو سکول آتا ہے اور اپنے مضامين ميں دوسرے طلبا کے ساتھ مل کر کام کرنے کا لطف اٹھاتا ہے۔ پورا سکول ان کي کاميابيوں پر نازاں ہے۔‘

’پوک ايسا نہيں سوچتا کہ وہ دوسروں سے زيادہ آگے ہے۔ ميں اسے ايک کاميابي کے بعد دوسري کاميابي سميٹتے ہوئے ديکھ رہا ہوں۔ درحقيقت ميں مستقبل ميں ان سے بڑي کاميابيوں کي توقع کرتا ہوں۔‘

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *